پی ٹی آئی کا جنرل سیکریٹری محکمہ تعلیم کا سیکریٹری بن چکا ہے؟

کیونکہ تعلیم جیسے محکمہ میں کسی ماہرِ تعلیم یا دانشور کو تعینات کیا جانا چا ہیئے نہ کہ کسی؟؟؟

پاکستان تحریک انصاف نے عوام سے مثبت تبدیلی اور سماجی انصاف فراہم کرنے کے نام پر ووٹ لیا تھا اور عوام نے اس پارٹی کو مئی13 20کے انتخابات میں اپنے مسائل کے حل کے لئے بھرپور مینڈیٹ دیا مگر بدقسمتی سے تا حال عوام مثبت تبدیلی دیکھنے سے محروم ہیں البتہ چہرے تبدیل ہوتے ہیں، پہلے سرکاری محکموں میں دوسری پارٹیوں کے ضلعی عہدیدار سیاسی مداخلت کے مرتکب ہو رہے تھے جب کہ اب پی ٹی آئی کے عہدیدار بڑے ذوق و شوق سے یہ فریضہ سر انجام دے رہے ہیں، تازہ خبر یہ ہے پی ٹی آئی کے جنرل سیکٹری ساجد اقبال نے محکمہ تعلیم میں ڈیرے ڈال رکھے ہیں اور وہ محکمہ تعلیم کے افسران اساتذہ کی ٹرانسفر اور پوسٹینگ کے معاملات میں عقل قل بنے ہوئے ہیں حالانکہ ان کے متعلق ابھی تک کسی کو یہ معلوم نہیں کہ مذکور خود کتنے تعلیم یافتہ ہیں ؟یہ کوئی وڈیو سنٹر نہیں جو کوئی بھی چلا سکے ، یہ معاملہ ہمارے بچوں کے مستقبل کا ہے۔ اگر انکو شہریار آفریدی نے یا ضیاء بنگش نے یہ اختیارات سونپے ہیں تو پھر اُنکی عقل و دانش پر ہم صرف افسوس ہی کر سکتے ہیں۔
کیونکہ تعلیم جیسے محکمہ میں کسی ماہرِ تعلیم یا دانشور کو تعینات کیا جانا چا ہیئے نہ کہ کسی؟؟؟
پی ٹی آئی کے قائدین کو ہمارا مشورہ ہے کہ محکمہ تعلیم سمیت دیگر محکموں میں بے جا سیاسی مداخلت کرنے کے بجائے ان محکموں کے مسائل حل کرنے پر توجہ دی جائے تاکہ عوام کو منفی کے بجائے مثبت تبدیلی کی جھلک نظر آ سکے۔

مصنف کے بارے میں:

انقلابی سوچ رکھنے والے گل نبی آفریدی سینی گمبٹ ڈاٹ کام سمیت گمبٹ کمپیوٹر اکیڈمی کے بانی و پرنسپل ہیں، جو کہ محنت اور صرف محنت پر یقین رکھتے ہیں۔

تبصرہ کیجیے