کرکٹ میں دعوت تبلیغ

رپورٹ منصور اختر

بنی نو ع انسان جو کہ طبعی طور پر دین اسلام کی فطرت پر پیدا ہواہے۔ تمام تر مصروفیات دنیا وی زندگی سے ہٹ کر وہ آخرکار دین میں ہی سکون محسوس کرتا ہے دنیا کے مختلف شبعہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد جو کہ کسی نہ کسی موقع اور شعبہ میں دینی لگاؤ رکھتے ہیں وہاں پر پاکستان کرکٹ ٹیم کے کھلاڑیوں کا دین کی محنت کے شعبہ دعوت تبلیغ کے طرف رجحان و لگاؤ بھی فطری عمل ہے کیونکہ کرکٹ میں جس حد تک پاکستان میں مقبول ہے اور عوام جسطرح کرکٹر ز کے دلدادہ ہیں انہی کے بد ولت عوام  انکے کھیل کے ساتھ انکی باتیں اور انٹرویوز شوق سے سنتے ہیں کرکٹ میں سیعد انور ، انضما م الحق،محمد یوسف،مشتاق احمد، ثقلین مشتاق، شاہد آفریدی، کے بعد نامور فاسٹ باؤلر شیعب اختر المعروف راولپنڈی ایکسپریس کا بھی دعوت تبلیغ کے طرف رجحان ایک فطری عمل کے ساتھ ساتھ قابل دید بھی ہے شیعب اختر جو وقتاً فوقتاً تبلیغی دورے ، سہ روزے  لگا کر کئی ایک Speech  کر چکے ہیں ۔

گذشتہ روز اچانک کوہاٹ پہنچے جہاں نامور سکالر (سرپرست اقراء روضۃ الطفال ادرہ)کے محمد سہیل شنواری (امیر صاحب) نے انکا استقبال کیا شعیب اختر جو لکی مروت کے تبلیغی دورے سے کوھاٹ پہنچے تھےسہیل شنواری کے ہمراہ روضۃ الطفال ادرہ کا دورہ کیا جہاں انہوں نے دوستوں کے ہمراہ دوپہر کا کھانا کھایا اور طلباء سے گھل مل گئے سکو ل کی دینی عصری تعلیم ساتھ پڑھانے پر بہت خوش ہوئے بعد ازاں ظہر کو تبلیغی مرکز پہنچے جہاں مرکزمیں 48 منٹ کے بیان میں انہوں نے کہا کہ اپ یقیناً میری باولنگ اور کرکٹ سے لطف اندوز ہوئے اور ہوتے ہوں گے اور اب منبر رسول پر بیٹھ کر بھی یقیناً خوش ہونگے انہوں نے کہہ کہ اس پہلے کوھاٹ آنے کا پروگرام تھا لیکن طبعیت ناسازی کی وجہ سے نہ آسکا انہوں نے کہا کہ انہیں کوھاٹ سے محبت کوھاٹ کے لوگ مہمان نواز اور دین دار ہے ۔ انہوں نے کہا کہ تبلیغی میں آکر وہ بہت سکون محسوس کر رہے ہیں۔ انہیں آفسوس ہے کہ وہ قرآن حفظ نہ کر سکے میرے خاندان والے کہتے ہیں کہ تو پیر ی مریدی والا آدمی اور  نقشبندی  ہے تو کہاں پھنس گیا تو میں نے کہاکہ یہ بھی تو اپنے لوگ ہیں جو میرے اور دوسرے انسانوں کے ہمدرد ہیں ۔

نامور کرکٹ شعیب اختر المعروف راولپنڈی ایکسپریس نے ہے کہ انسان کی کامیابی دین میں ہے ہمیں اعمال کرکے اپنی آخرت کو بنانا انہوں نےکہا کہ وہ دنیا میں اتنا مصروف تھے کہ انہیں اعمال کی فکر نہیں تھی دعوت تبلیغ آکر انہیں احساس ہوا کہ کامیابی کی جگہ یہ ہے انہوں نے کہ حضور صلی اللہ علیہ والہ وسلم کی سیرت ہمارے لئے نمونہ ہے اور حضورکے وصال کے وقت آخری الفاظ نماز کے بارے میں تھے اسلئے ہمیں نماز قائم کرنی چاہیے شعیب اختر نے اپنے 48 منٹ کے بیان میں سیرت ، حقول العباد، حقوق والدین، نمازاور دعوت تبلیغ پر زوردیا، آخرمیں انہوں نے کہا کہ کوہاٹ کے لوگ بہت محبت کرنے والے ہیں اور جلد میں کوہاٹ میں سہ روزہ لگاؤں گاجبکہ میرا ارداہ ہے کہ 40 دن میں دو دو دن ہر علاقے کو دوں۔ آخرمیں انہوں نے مجمع سے سہ روزہ ، چار مہینے کے نقد ارادے لئے جبکہ اختتامی دعا میں انہوں نے پاکستان خصوصاً خیبر پختونخواہ میں امن کی دعا کی اور دین کی محنت میں خود اور تمام مسلمانوں کے لگانے کی دعا کی۔

بیان کے بعد وہ گمبٹ تشریف لے گئے جہاں انہوں نے مسجد عبدالرحمان میں سال پیدل جماعت کی نصرت کی جبکہ مین بازار گمبٹ میں ہجوم کے ساتھ گھل مل گئے اور سب دعوت دی بعد ازاراولپنڈی ایکسپریس پنڈی راونہ ہوگئے

مصنف کے بارے میں:

انقلابی سوچ رکھنے والے گل نبی آفریدی سینی گمبٹ ڈاٹ کام سمیت گمبٹ کمپیوٹر اکیڈمی کے بانی و پرنسپل ہیں، جو کہ محنت اور صرف محنت پر یقین رکھتے ہیں۔

تبصرہ کیجیے